24 C
Karachi
اکتوبر 31, 2020
NowNews.pk | 24/7 News Network

کیا سیپکو اہلکار وزیر اعظم سے بھی زیادہ طاقتور ہیں؟

رپورٹ: عبید شیخ، نمائندہ خصوصی سندھ

وزیراعظم بھی کہے تو بغیر پیسوں کے ٹرانسفارمر نہیں بن سکتا، سیپکو اہلکار کا بجلی صارفین کو جواب، صارفین کی شکایت پر سی ای او بھی مذکورہ اہلکار کے سامنے بے بس ہوگیا۔

سکھر الیکٹرک پاور کمپنی سیپکو کے اہلکار ادارے میں چیف ایگزیکٹو افسر سے بھی بااختیاربن گئے ہیں اور سیپکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر بھی ان کے سامنے بے بس لاچار اور مجبور بن گئے ہیں جس کی واضح مثال گذشتہ روز سکھر میں دیکھنے آئی۔

سکھر کےعلاقےریس کورس روڈ پر گذشتہ روز بجلی کا ٹرانسفارمر خراب ہو گیا جسکی اطلاع علاقے کے بجلی صارفین نےسیپکو حکام کو دی جس پر سیپکو اہلکار ٹرانسفارمر اتار کر لے گئے لیکن دو دن گذر جانے کے بعد بھی وہ ٹرانسفارمر دوبارہ نہ لگ سکا جس پر صارفین نے سیپکو اہلکاروں سے رابطہ کیا تو انہوں نے ٹرانسفارمر لگانے کے عیوض پندرہ سے بیس ہزار روپے کی رقم طلب کی۔

صارفین کی جانب سے سی ای او،ایس ای اور دیگر سیپکوحکام کو بھی کی گئی لیکن سیپکو چیف نے نہ کوئی ایکشن لیا اور نہ ہی کوئی کارروائی کی جس پر صارفین نے دوبارہ سیپکواہلکاروں سے رابطہ کیا تو ان کا کہنا تھا کہ یہ تو سیپکو چیف ہیں اگر وزیراعظم عمران خان سے بھی کرتے تو پیسے دینے پڑتے ہیں۔

صارفین نے پیسے دینے پر رضامندی ظاہر کردی اور علاقے سے چندہ جمع کرکےسیپکو اہلکاروں کوادائیگی کی جس کے بعد دو دنوں تک نہ لگنے والا ٹرانسفارمر ایک گھنٹے میں لگ گیا اورعلاقے کی بجلی بحال۔ہوسکی سیپکو اہلکاروں اور ان کی کمپنی کے سربراہ کے رویئے پر سیپکو کے لاکھوں صارفین نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

دیگر خبریں

لوڈنگ ۔۔۔