NowNews.pk | 24/7 News Network

ہمیں چرس پینے کی اجازت دی جائے

چرس پینے کی اجازت لینے کے لیے شہری سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا۔

10گرام چرس پینے اور رکھنے کی اجازت کے لئے سندھ ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی گئی تو عدالت نے درخواست مسترد کردی، عدالت نے درخواست گزار پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ یہ آپ کیسی درخواست لے کر آئے ہیں؟ کیا آپ چاہتے ہیں سب لوگ چرس پینا شروع کردیں؟ بتائیں آپ پر کتنا جرمانہ عائد کیا جائے؟

درخواست گذار نے جواب دیا کہ میں غریب آدمی ہوں، مفاد عامہ کی درخواست لے کر آیا ہوں، 10 گرام چرس رکھنے پر جرمانہ بھی ختم کیا جائے، شریف چرس لوگ پیتے ہیں، جنہیں پولیس تنگ کرتی ہے، دنیا کے بیشتر ممالک میں چرس پینے کی اجازت ہے۔

جسٹس محمد علی مظہر کا کہنا تھا کہ آپ کو پینا ہے تو ان ممالک میں چلیں جائیں، یہاں اجازت نہیں، ایسی درخواستیں عدالت میں کیوں لیکر آتے ہیں؟

درخواست گذار نے مزید دلیل دی کہ چرس سے ملک کی آمدنی بڑھے گی، ریونیو بنے گا۔

جسٹس محمد علی مظہر نے کہا کہ نہیں چاہئیے ایسا ریونیو، آمدنی بڑھانےکےاور بھی جائزطریقے ہیں۔

درخواست میں وزارت قانون وفاق و دیگر کو فریق بنایا گیا تھا۔

دیگر خبریں

لوڈنگ ۔۔۔