NowNews.pk | 24/7 News Network

پاکستان کی ہندو برادری کا مودی کے خلاف لانگ مارچ

رپورٹ: عبید شیخ، نمائندہ خصوصی سندھ

جودھ پور میں گیارہ پاکستانی ہندوتارکین وطن کے قتل پر سندھ کی ہندو برادری سڑکوں پرنکل آئی، حیدرآباد سے اسلام آباد لانگ مارچ شروع کردیا، لانگ مارچ کے شرکاء کا روہڑی بائی پاس پر احتجاج، مودی اور بھارتی حکومت کے خلاف نعرے بازی، واقعہ بھارت کے سیکولرازم چہرے پر بدنما داغ ہے، بھارتی حکومت نے سدباب اور انصاف نہ کیا تو عالمی عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔ رہنماؤں کا خطاب

بھارت کے شہر جودھ پور میں گیارہ پاکستانی تارکین وطن ہندوؤں کے بہیمانہ قتل کے خلاف سندھ کی ہندو برادری سڑکوں پر نکل آئی ہے اور سندھ کی ہندو برادری نے واقعہ کے خلاف پاکستان ہندو کونسل کی اپیل پر حیدرآباد سے اسلام آباد تک لانگ مارچ شروع کردیا ہے لانگ مارچ کے شرکاء اسلام آباد میں بھارت کے مظالم کے خلاف دھرنا دیں گے لانگ مارچ کے شرکاء جن میں خواتین اور بچوں کی بھی ایک بڑی تعداد شامل ہے۔

سیکڑوں گاڑیوں میں سوار لانگ مارچ کے شرکاء حیدرآباد سے روانگی کے بعد روہڑی پہنچے جہاں پر انہوں نے بائی پاس پراحتجاجی مظاہرہ کیا اور نریندر مودی اور بھارتی حکومت کےخلاف فلک شگاف نعرے بازی کی۔

اس موقع پر رہنماؤں کا کہنا تھا کہ سیکولرازم کے دعوے دار بھارت میں پاکستان سے ہجرت کرکے جانے والے پاکستانی ہندوؤں کے ساتھ مظالم کا سلسلہ جاری ہے جس کی مثال گیارہ پاکستانی ہندوؤں کا قتل ہے اور اس واقعہ نے بھارت کے مکروہ چہرے کو بے نقاب کردیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت پاکستانی تارکین وطن کے ساتھ مظالم بند کرے اور انصاف کرے ورنہ ہم عالمی عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔

انہوں نے عالمی برادری سے بھی اس واقعہ کا نوٹس لینے اور آر ایس ایس اور را کو دہشتگرد تنظیم قرار دینے کا مطالبہ کیا اور پاکستانی حکومت سے اپیل کی کہ وہ عالمی عدالت سے بھارت میں قتل ہونے والے افراد کے ورثاء کو انصاف دلائے، لانگ مارچ کے شرکاء کچھ دیر تک روہڑی میں قیام کے بعد اپنی اگلی منزل کی طرف روانہ ہوگئے۔

دیگر خبریں

لوڈنگ ۔۔۔